another-7-child-died-in-tharparkar, mithi, inklaab news, inklaab , pakistan , tharparkar, 21

مٹھی :صحرائےتھر کے بچوں پر موت کا رقص،مزید 7 بچے دم توڑ گئے

رپورٹ:مریم صدیقہ انقلاب نیوزمٹھی
غذائی قلت،امراض اور بدانتظامی کے باعث حالات سنگین ہونے لگے۔ہزاروں حاملہ خواتین بتدریج غذائی قلت کا شکار۔تفصیلات کے مطابق صحرائے تھر کے بچوں پر موت کا رقص جاری ہے۔غذائی قلت،وبائی امراض اور بدانتظامی کے باعث حالات سنگین ہوتے جا رہے ہیں۔گذشتہ روز سول اسپتال مٹھی سمیت ضلع بھر میں 7بچے دم توڑ گئے ہیں۔جن میں سات ماھ کا اویس،دو سالہ اظہر ،عمر کی نومولود بچی،گھمرو کی نومولود بچی،ایشور کی نومولود بچی،تین دن کی سکینہ،تین روزہ اسماعیل شامل ہیں۔جس کے بعد رواں ماھ کے دوران غذائی قلت کے باعث جاں بحق ہونے والے بچوں کی تعداد 13ہو گئی ہے۔ضلعی ہیڈکوارٹر اسپتال میں ادویات کی قلت کے ساتھ بچوں کے وارڈز میں صفائی کی صورتحال بھی ابتر ہے ۔دیگر شہروں اسلام کوٹ،نگرپارکر ،چھاچھرو اور ڈیپلو کی اسپتالوں میں بھی بچوں کے وارڈز میں درکار سہولیات تو دور کی بات مگر انکیوبیٹرز بھی مینٹین نہیں کئے جا رہے ہیں ۔نتیجے میں دور دراز دیہاتوں سے علاج کے لیئے لائے گئے بچے ہر آئے دن موت کے منہ میں جا رہے ہیں۔اور جب مائیں اپنے بچوں کو صحتیابی کی بجائے لاشیں کے کر نکلتی ہیں تو ان کی آہوں اور سسکیوں سے ان صحت مراکز کے در و دیوار گونج جاتے ہیں۔دیہاتوں میں ہزاروں حاملہ خواتین بتدریج غذائی قلت کا شکار ہیں ۔جس کے باعث آنے والے دنوں میں اموات بڑھنے کے خدشات ہیں۔ مگر حکومت سندھ کی صحت میں بہتری کے دعوے دھرے کے دھرے ہی رہ گئے ہیں۔دریں اثناء تھری باشندوں نے صوبائی اور وفاقی حکومت سے اپیل کی ہے کہ ھنگامی اقدامات کرتے ہوئے بچوں کو مرنے سے بچایا جائے۔سندھ حکومت نے این جی اوز کے تعاون سے بچوں کے غذائی قلت کی خوراک بھی بند کردی ہے۔

اپنی رائے دیں

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں